Skip to content

دل ہے تیرے پیار کرنے کوں

دل ہے تیرے پیار کرنے کوں
جی ہے تجھ پر نثار کرنے کوں

اک لہر لطف کی ہمیں بس ہے
غم کے دریا سوں پار کرنے کوں

چشم میری ہے ابر نیسانی
گریۂ زار زار کرنے کوں

چشم نیں انجہواں کی بستی کی
ظلم تیرا شمار کرنے کوں

رشک سیں جب کوئی چھوئے وہ زلف
دل اٹھے مار مار کرنے کوں

اس ادا سوں لٹک لٹک مت آ
دل مرا بے قرار کرنے کوں

ناؤں کوں گرچہ تو ممولا ہے
باز ہے دل شکار کرنے کوں

کیا کروں کس سے جا لگاؤں گھات
آبروؔ اس کے یار کرنے کوں