Skip to content

وہ جو روٹھیں یوں منانا چاہیئے

وہ جو روٹھیں یوں منانا چاہیئے
زندگی سے روٹھ جانا چاہیئے

ہمت قاتل بڑھانا چاہیئے
زیر خنجر مسکرانا چاہیئے

زندگی ہے نام جہد و جنگ کا
موت کیا ہے بھول جانا چاہیئے

ہے انہیں دھوکوں سے دل کی زندگی
جو حسیں دھوکا ہو کھانا چاہیئے

لذتیں ہیں دشمن اوج کمال
کلفتوں سے جی لگانا چاہیئے

ان سے ملنے کو تو کیا کہئے جگرؔ
خود سے ملنے کو زمانا چاہیئے